یشونت سنہا کا بی جے پی پارٹی سے تمام تعلقات ختم کرنے کا باضابطہ اعلان

یشونت سنہا کا بی جے پی پارٹی سے تمام تعلقات ختم کرنے کا باضابطہ اعلان

بی جے پی سے ناراض اور مرکزی حکومت کے مخالفین پٹنہ میں ایک اسٹیج پر جمع ہوئے ہیں۔ اس پروگرام کی قیادت یشونت سنہا کررہے ہیں۔ یشونت سنہا نے راشٹر منچ سے بی جے پی سے تمام تعلقات ختم کرنے کا اعلان کیا ہے۔  یشونت سنہا نے کہا کہ میں بی جے پی سے اپنے تمام تعلقات ختم کرتا ہوں اور اس منچ سے اس کا اعلان کرتا ہوں۔یشونت سنہا نے کہاکہ میں آج کے بعد کسی پارٹی کے ساتھ نہیں رہوں گا اور نہ ہی کسی بھی سیاسی پارٹی سے کوئی رشتہ رکھوں گا۔ آج ملک میں جمہوریت خطرے میں ہے، جن لوگوں نے جمہوریت کو خطرے میں ڈالا ان طاقتوں کو ہم ختم کردیں گے۔ انہوں نے کہاکہ پٹنہ میرا شہر ہے، آج سے چار سال پہلے ہی میں سرگرم سیاست سے ریٹائر منٹ لے چکا ہوں، میں انتخابی سیاست سے خود کو الگ کرلیا ہے۔ایسے میں لوگوں نے سمجھا کہ میرا بھی دھڑکنا بند کردیا ہے، لیکن جب ملک کی بات آئے گی تو میں بڑھ چڑھ کر حصہ لوں گا۔ ملک کے سوال پر ہی میں نے راشٹر منچ کا قیام کیا ہے اور یہ منچ سیاسی منچ نہیں ہے۔ انہوں نے کہاکہ فی الحالف ملک کی حالت مایوس کن ہے اور ایسے میں اگر آج ہم خاموش رہے تو آنے والی نسل قصور وار ٹھہرائے گی۔یشونت سنہا نے کہاکہ بہار نے بڑی تحریکیں پیدا کی ہیں۔ مرکزی حکومت پر یشونت سنہا نے حملہ کرتے ہوئے کہاکہ پارلیمنٹ کا بجٹ سیشن اتنا چھوٹا کبھی نہیں رہا، لیکن حکومت ہند نے منصوبہ بند طریقے سے پارلیمنٹ کو چلنے نہیں دیا۔ گجرات الیکشن کے سب سیشن کو چھوٹا کر دیا گیا۔ سیشن نہیں چلنے سے حکومت بہت خوش تھی۔ حکومت نے عدم اعتمادکی تجویز کے سبب سیشن نہیں چلنے دیا۔اس سمینار میں بی جے پی ممبرپارلیمنٹ شتروگھن سنہا، بہار کے اپوزیشن لیڈر تیجسوی یادو، شرد یادو اور جے ڈی یو کے ناراض لیڈر اودے نارائن چودھری بھی شرکت کررہے ہیں۔ جلسے میں کانگریس، آرجے ڈی، عام آدمی پارٹی اور سماجوادی پارٹی سمیت بی جے پی اور جے ڈی یو کے ناراض لیڈروں کو بھی مدعو کیا گیا ہے۔ یشونت سنہا اس سے قبل بھی مسلسل بی جے پی پر حملہ بولتے رہے ہیں، ایسے میں پٹنہ میں ان کی قیادت میں بلائی گئی یہ میٹنگ مستقبل کے سیاسی  نقطۂ نظر سے کافی اہم سمجھی جارہی ہے۔