وسیم رضوی: بابری مسجد کے معاملہ میں مداخلت سے گریز کرے سنی وقف بورڈ

وسیم رضوی: بابری مسجد کے معاملہ میں مداخلت سے گریز کرے سنی وقف بورڈ

شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی نے اب سنی وقف بورڈ سے کہا ہے کہ وہ بابری مسجد کے معاملہ میں مداخلت نہیں کرے ۔ وسیم رضوی کا کہنا ہے کہ بابری مسجد شیعہ وقف بورڈ کی زمین ہے اور سنی وقف بورڈ کو اس معاملہ سے الگ رہنا چاہئے ۔ سنی وقف بورڈ کو متھرا اور کاشی میں واقع مندر - مسجد تنازع کا پرامن حل نکالنا چاہئے ۔ خیال رہے کہ وسیم رضوی جب سے بدعنوانی کے الزامات میں گھرے ہیں ، تب سے ہی رام مندر کی حمایت میں کھل کر بیان بازی کررہے ہیں ۔ جبکہ شیعہ برادری لگاتار وسیم رضوی کی مخالفت کررہی ہے۔اترپردیش شیعہ سینٹرل وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی نے تازہ بیان جاری کرکے کہا ہے کہ سنی وقف بورڈ کو کاشی اور متھرا میں مسجد اور مندر تنازع میں اپنا موقف رکھنے کا حق ہے ، لیکن اجودھیا میں ایسا کرنے کا کوئی حق نہیں ہے کیونکہ یہ معاملہ شیعہ وقف بورڈ سے وابستہ ہے۔وسیم رضوی نے مزید کہا ہے کہ سنی وقف بورڈ کوچاہئے کہ وہ شیعہ کی املاک پر اپنا حق چھوڑ کر متھرا اور کاشی میں مندر مسجد تنازع کا پرامن حل نکالنے کی سمت میں مثبت پہل کرے ۔ انہوں نے کہا کہ شیعہ وقف بورڈ یہ واضح کردینا چاہتا ہے کہ ان کے ذریعہ اٹھایا گیا قدم ملک کے مفاد میں ہے ۔ شیعہ وقف بورڈ نے اپنا موقف سپریم کورٹ کے سامنے بھی پیش کرچکا ہے۔