سہارا کے خلاف سیبی کا سپریم کورٹ سے رجوع

سہارا کے خلاف سیبی کا سپریم کورٹ سے رجوع

 مارکیٹ ریگولیٹر، سیکورٹیزاینڈ ایکس چینج بورڈ آف انڈیا (سیبی) نے سپریم کورٹ میں تجارتی ادارے سہارا کے خلاف توہین کا ایک مقدمہ دائر کیا ہے جس میں ادارے پر الزام ہے کہ اس نے ایم بی ویلی پروجیکٹ کی نیلامی میں رکاوٹ کھڑی کی ہےعدالتعظمی کی ایک بنچ سہارا سیبی مقدمہ کی سماعت کررہی ہے ۔ بینچ کی قیادت چیف جسٹس دیپک مشرا کررہے ہیں۔سیبی نے عدالت عظمی سے کہا تھا کہ سہارا نے تمام سرمایہ کاروں کو ان کے پیسے نہیں لوٹائے ۔ سہارا کا کہنا ہے کہ وہ سرمایہ کاروں کو 75 فی صدسے زیادہ پیسے لوٹا چکا ہے۔سیبی نے الزام لگایا ہے کہ سہارا کے سربراہ سبرت رائے سہارا 2012 کے سپریم کورٹ کے اس حکم کی تعمیل کرنے میں ناکام رہے ہیں جس میں ہدایت دی گئی تھی کہ سرمایہ کاروں کے 20 ہزار کروڑ روپے 15 فی صد سود کےساتھ لوٹایا جائے۔ سہارا کبھی ہندستان کے عظیم تجارتی اداروں میں سے ایک تھا۔ماضی قریب میں اس ادارے نے سبرت رائے سہارا کی ضمانت کے لئے پیسے اکٹھا کرنے کی ایک سےزیادہ کوششیں کیں جو ناکام رہیں۔ ادارے نے بیرو ن ہند ہوٹلوں بشمول پلازہ (نیویارک) گروزوینر ہاؤس (لندن) کو بیچ کر رقم اکھٹی کرنے کی کوشش کی تھی۔ عدالت عظمی نے پچھلے مہینے کی گیارہ تاریخ کو ایم بی ویلی پروجیکٹ کی نیلامی پر حکم موقوفی جاری کرنے سے انکار کردیا تھا۔