آسام غیر ملکی معاملہ میں رشمی نارا بیگم کی ضمانت میں توسیع ، مودی حکومت کو حلف نامہ داخل کرنے کی ہدایت:سپریم کورٹ

آسام غیر ملکی معاملہ میں رشمی نارا بیگم کی ضمانت میں توسیع ، مودی حکومت کو حلف نامہ داخل کرنے کی ہدایت:سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے رشمی نارا بیگم کی ضمانت کی معیاد میں عبوری طور سے توسیع کرتے ہوئے اس معاملہ کی سماعت چار ہفتہ کے لئے ملتوی کر دی ہے ۔غیر ملکی شہریت معاملہ کا سامنا کر رہی رشمی نارا بیگم آسام کے معروف مجاہد آزادی کی بیٹی ہیں۔ واضح ہو کہ رشمی نارا بیگم کی ضمانت کی میعاد میں اس سے قبل دو بار عبوری توسیع ہو چکی ہے ۔عدالت نے حکومت ہند کو اس معاملہ میں چار ہفتہ کے اندر اپنا حلف نامہ داخل کرنے کی ہدایت دی ہے ۔ اس معاملے کی اگلی سماعت اب چار ہفتہ بعد ہوگی۔اطلاع کے مطابق جسٹس اے کے اگروال کی بنچ میں غیر ملکی قرار دی جا چکی آسام کی شہری رشمی نارا بیگم کے معاملے میں سماعت ہوئی ۔ عدالت کے ذریعے جاری کردہ نوٹس کی بنیاد پر حکومت ہند کی جانب سے ابھی تک جواب داخل نہیں کیا گیا ہے جس کی وجہ سے پھر عدالت کی کارروائی آگے نہیں بڑھ سکی۔آسام اسٹیٹ کی جانب سے  ہائی کورٹ کے فیصلہ کا دفاع کرتے ہوئے درست قرار دیا گیا ۔اس دوران عدالت کو یہ باور کرایا گیا کہ رشمی آرا بیگم جنہیں جیل میں رہتے ہوئے ایک بچے کوجنم دینے کے بعد انسانی بنیاد پر تین ماہ کی ضمانت پر رہا کیا گیا تھا ، اب انہیں خود سپردگی کرنی ہوگی۔ عدالت نے حالات کے پیش نظررشمی نارا بیگم کی عبوری ضمانت میں ایک بار پھر اضافہ کر دیا ہے ۔ عدالت نے حکومت ہند کوچار ماہ کے اندر اپنا حلف نامہ داخل کر کے اس ایشو پر وضاحت کرنے کو کہا ہے تاکہ اس معاملے کا کوئی فیصلہ کیا جا سکے۔واضح ہوکہ آسام میں غیر ملکی شہری مہم کے تحت رشمی آرا بیگم کو غیر ملکی قرار دے کر جیل میں ڈال دیا گیا تھا جبکہ رشمی نارابیگم آسام کے معروف مجاہد آزادی رمضان علی کی بیٹی ہیں ۔رشمی کو جیل میں ڈال دئے جانے کے بعد جمعیۃ علما ہند کے صدرمولانا سید ارشد مدنی کی ہدایت پر جمعیۃ علما ہند کی آسام لیگل کمیٹی نے اس فیصلے کو چیلنج کرتے ہوئے سپریم کورٹ میں پٹیشن دائر کی تھی۔ عدالت کے ذریعہ رشمی نارا بیگم کی ضمانت کی میعادمیں توسیع کئے جانے پر مولانا ارشد مدنی نے اطمینان کا اظہار کیا اور امید ظاہر کی ہے کہ مظلومہ کوسپریم کورٹ سے انصاف ضرور ملے گا ۔