مختار عباس نقوی: وزیراعظم پر سوالات اٹھانے سے پہلے راہل ملک کی ثقافت کو سمجھیں

 مختار عباس نقوی: وزیراعظم پر سوالات اٹھانے سے پہلے راہل ملک کی ثقافت کو سمجھیں

بھارتیہ جنتا پارٹی کے سینئر لیڈر مختار عباس نقوی نے گجرات اسمبلی انتخابات کے پیش نظر وزیر اعظم نریندر مودی پر روز نئے سوالات داغنے والے کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی پر طنز کرتے ہوئے کل کہا کہ ’سوالات کے سورما‘بننے والے گاندھی کو خود ملک کی سیاست اور ثقافت کی اے بی سی ڈی نہیں پتہ ۔  نقوی نے کانگریسی نائب صدر پر نشانہ لگاتے ہوئے ٹویٹ کیا، ’’جنہیں ’برگر اور بینگن‘، ’پیاز اور پیزا‘ اور ’کیک اور کیلے‘ کا فرق نہیں معلوم، وہ’سوالات کے سورما‘ بننے نکلے ہیں۔ ’خاندانی سیاست کی کانگریسی حماقت‘ اسی کو کہتے ہیں۔ ’’ گاندھی کو ملک کی ثقافت اور سیاست کے بارے میں سمجھ پر سوال اٹھاتے ہوئے  نقوی نے لکھا ہے،’’ پہلے وہ ملک کی سیاست اور ثقافت کی اےبي سي ڈی بتائیں، جس دن انہیں یہ معلوم ہو جائے گا اس دن تمام جوابات ملیں گے‘‘۔ گاندھی گجرات اسمبلی انتخابات کو لے کر وزیر اعظم سے گزشتہ چار دنوں سے گجرات کی صورت حال کے بارے میں ہر روز ایک سوال پوچھ رہے ہیں۔ وہ یہ سوال ٹویٹر پر اور ریلیوں پر پوچھ ر ہے ہیں۔ ان سوالوں میں، وہ گجرات میں گزشتہ 22 سالوں کی بی جے پی حکومت کو کٹہرے میں کھڑے کر رہےہیں۔گجرات میں اسمبلی انتخابات نو اور 14 دسمبر کو دو مراحل میں ہونے ہیں اور اسے لے کر بی جے پی اور کانگریس دونوں ہی پارٹیوں کی انتخابی مہم زوروں پر ہے۔ مہم کے دوران ریلیوں میں جہاں بی جے پی  گاندھی کو نشانہ بنا رہی ہے وہیں  گاندھی وزیر اعظم پر سوالات کی بوچھار کر کے انہیں گھیرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔