حزب المجاہدین میں شامل ہوا فوجی جوان ادریس میر :جموں و کشمیر

حزب المجاہدین میں شامل ہوا فوجی جوان ادریس میر :جموں و کشمیر

جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان میں گزشتہ روز لاپتہ ہونے والے فوجی اہلکار نے مبینہ طور پر جنگجو تنظیم حزب المجاہدین کی صفوں میں شمولیت اختیار کرلینے کے اندیشہ کا اظہار کیا جارہا ہے۔ ضلع شوپیان کے صف نگری کے رہنے والے ادریس میر کی ایک تصویر سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر وائرل ہوگئی ہے جس میں اسے ایک اے کے 47 ہاتھوں میں تھامے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔ ادریس بہار کے کٹیہار میں فوج کی جموں و کشمیر لائٹ انفینٹری یونٹ میں تعینات تھا ۔ اسے جھارکھنڈ بھیجا جانا تھا اور پولیس کے مطابق وہ اس وجہ سے کافی ناراض تھا ۔سرکاری ذرائع کے مطابق ادریس 12 اپریل کو چھٹی پر اپنے گھر آیا تھا۔ وہ 14 اپریل سے لاپتہ تھا‘۔ ذرائع نے بتایا کہ ادریس کے گھر والوں نے اس کی گمشدگی کی رپورٹ بھی درج کرائی تھی۔ انہوں نے بتایا ’ادریس کا فون بند آنے کے بعد اس کے گھر والوں نے متعلقہ پولیس تھانے میں اس کی گمشدگی کی رپورٹ بھی درج کرائی‘۔ سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تصویر کے کیپشن کے مطابق ادریس کو ’چھوٹا ابرابر‘ کا کوڈ نام دیا گیا ہے۔تصویر کیپشن میں میں ادریس اور اس کے والد کا نام بھی لکھا ہوا ہے ۔ بتادیں کہ وادی میں مقامی نوجوانوں کے عسکریت پسندوں کی صفوں میں شمولیت اختیار کرنے کے رجحان میں اچانک اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔ گذشتہ تین ماہ کے دوران قریب دس نوجوانوں نے اعلاناً مختلف عسکری گروپوں میں شمولیت اختیار کی ہے۔