مکہ مسجد بم دھماکہ کیس میں سوامی اسیمانند سمیت پانچ ملزموں کو بری کرنے والے جج نے دیا استعفی

مکہ مسجد بم دھماکہ کیس میں سوامی اسیمانند سمیت پانچ ملزموں کو بری کرنے والے جج نے دیا استعفی

حیدر آباد کی مشہور مکہ مسجد میں سال 2007 میں ہوئے بم دھماکوں کے معاملہ میں دائیں بازو کے لیڈر سوامی اسیمانند سمیت سبھی پانچ ملزموں کو بری کرنےو الے جج نے استعفی دیدیا ہے ۔ ذرائع کے مطابق این آئی کی خصوصی عدالت کے جج آر ریڈی نے اس فیصلہ کے فورا بعد ہی استعفی کی پیش کش کی تھی ۔ تاہم انہوں نے استعفی کیلئے کچھ ذاتی وجوہات کا حوالہ دیا ہے ، مگر استعفی کے وقت کی وجہ سے بہت سے سوالات کھڑے ہورہے ہیں۔خیال رہے کہ مکہ مسجد میں 18 مئی 2007 کو جمعہ کے دن نماز کے دوران ایک بڑا بم دھماکہ ہوا تھا ، جس میں نو لوگوں کی موت ہوگئی تھی اور 58 دیگر زخمی ہوئے تھے ۔ اس معاملہ میں سوامی اسیمانند ، دیویندر گپتان ، لوکیش شرما ، بھرت موہن لال عرف بھرت بھائی اور راجیندر چودھری کو ملزم بنایا گیا تھا ۔ عدالت نے ان سبھی ملزموں کو بری کرتے ہوئے کہا کہ پراسکیوشن ان کے خلاف الزام ثابت کرنے میں ناکام رہا ہے ۔مجلس اتحاد المسلمین کےسربراہ اسدالدین اویسی نے جج کے استعفی پر حیرانی کا اظہار کیا ہے ۔ انہوں نے ٹویٹ کرکے لکھا کہ مکہ مسجد کیس میں ملزموں کو بری کرنے کا فیصلہ سنانے والے جج کے استعفی کے فیصلہ سے مجھے کافی حیرانی ہوئی۔