مسلمانوں میں رانچی امبارکیشن پوائنٹ کو ختم کرنے کو لے کر شدید ناراضگی

مسلمانوں میں رانچی امبارکیشن پوائنٹ کو ختم کرنے کو لے کر شدید ناراضگی

رانچی امبارکیشن پوائنٹ کو ختم کرنے اور نئی حج پالیسی کی تجویز کے خلاف جھارکھنڈ کے مسلمانوں میں شدید ناراضگی دیکھی جا رہی ہے۔ اس موضوع پر گزشتہ روز رانچی میں مختلف سماجی تنظیموں کے ذریعہ عوامی اجلاس کا انعقاد کیا گیا۔ اجلاس میں متفقہ طورپران موضوعات کو لیکرمرکزی وزیراقلیتی امور مختارعباس نقوی اور وزیراعظم نریندر مودی سےعنقریب ملاقات کا منصوبہ بنایا گیا ۔رانچی امبارکیشن پوائنٹ کو ختم کرنے کی تجویز کی خبر سے ریاست کے مسلمانوں میں شدید ناراضگی ہے۔ اس موضوع پر تبادلہ خیال کے مقصد سے مختلف سماجی تنظیموں کے ذریعہ عوامی اجلاس کا انعقاد کیا گیا ۔ جس میں سابق مرکزی وزیر سبودھ کانت سہائے،  ریاستی حج کمیٹی کے ارکان،  تمام مسلک کے علمائے کرام اور مختلف سماجی تنظیموں کے نمائندگان شامل ہوئے۔ واضح رہے کہ ریاست کی تشکیل کے ایک لمبے عرصہ کی جدو جہد کے بعد رانچی ایئرپورٹ  سےعازمین کی روانگی کی سہولت فراہم کی گئی تھی ۔ اس سے قبل ریاست کے عازمین کولکاتہ سے سفر حج پر روانہ ہوتے تھے۔ علمائے کرام اور مختلف تنظیموں کے نمائندوں نے حج سبسڈی کو ختم کرنے کی تجویز کا خیرمقدم ضرور کیا لیکن بغیر محرم کے خواتین کے سفر حج پر روانگی کی سفارش کو غیرمناسب قرار دیا۔