ہندوستان نے پاکستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر کو کیاطلب ، درج کرایا اپنا احتجاج :سکھ عقیدت مند معاملہ

ہندوستان نے پاکستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر کو کیاطلب ، درج کرایا اپنا احتجاج :سکھ عقیدت مند معاملہ

ہندوستان نے سکھ عقیدتمندوں کےپاکستان دورے کے دوران اشتعال انگیز تقریر کر کے اور جگہ جگہ پوسٹر لگا کر 'خالصتان کا مسئلہ اٹھائے جانے کی کوششوں پر سخت احتجاج کرنے کے لئے پاکستانی ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کیا۔ وزارت خارجہ کے مطابق پاکستان سے کہا گیا ہے کہ وہ ہندوستان کی خود مختاری، علاقائی وحدت اور سماجی ہم آہنگی کو نقصان پہنچانے کے مقصد سے کی جانے والی سرگرمیوں كو فوری طور پر بند کرے۔پاکستان کو صاف پیغام دیا گیا کہ ہندوستان میں علیحدگی پسند تحریک کو حمایت دینے کی اس کے حکام اور اداروں کی مسلسل کوششیں ہندوستان کے اندرونی معاملے میں مداخلت ہے۔ہندوستان نے کہا کہ پاکستان جانے والے سکھ عقیدتمندوں کے ساتھ اس طرح کا سلوک دونوں ممالک کے درمیان مسافروں کے آنے جانے کے سلسلے میں سال 1974 میں ہونے والے دو پروٹوكول معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔اس سے پہلے ہندوستان نے پاکستان جانے والے سکھ عقیدتمندوں کو وہاں پر تعینات ہندوستانی سفارت کاروں اور ہائی کمیشن کی ٹیم سے ملنے کی اجازت نہ دینے کے پاکستان کے اقدام کو ویانہ معاہدے کی خلاف ورزی اور 'سفارتی بدسلوکی' قرار دیتے ہوئے اس پر سخت احتجاج درج کرایا تھا۔