ٹکٹوں کےلئے مسابقت جاری، کانگریسوں کو بی جے پی اورجے ڈی ایس سے امیدیں: کرناٹک انتخابات

ٹکٹوں کےلئے مسابقت جاری، کانگریسوں کو بی جے پی اورجے ڈی ایس سے امیدیں: کرناٹک انتخابات

کرناٹک میں جیسے جیسے اسمبلی  انتخابات کے دن نزدیک آتے جا رہے ہیں ٹکٹ پا نے والے اپنی تمام جدوجہد میں مصروف ہو گئے ہیں۔ امیدوار کسی بھی پارٹی کے ٹکٹ کے لئےکوشش میں لگے ہیں۔ کانگریس کی فہرست نے کئی لیڈروں کو مایوس کیا ہے۔ لیکن جسےکانگریس نے ٹکٹ نہیں دیا ہے، وہ بی جے پی اور جنتا دل سیکولر (جی ڈی ایس) انھیں اپنی پارٹی میں لانے کو تیار ہیں۔بی جے پی نے ابھی تک 70 سیٹوں کے لیے امیدواروں کے لئے اعلان نہیں کیا ہے۔ جبکہ جےڈی ایس بھی 98 امیدواروں کا اعلان کر نے والی ہے۔ ایسے میں ان دونوں پارٹیوں کی فہرست پر ہرکسی  کی نظر مرکوز ہے۔ بی جے پی  کو اچھے امیدواروں کا انتظار ہے جبکہ جے ڈی  ایس پہلے ہی ایسے 11 ناراض امیدواروں کو پارٹی میں لینےکے لئےتیار ہے۔گزشتہ ہفتے جب کانگریس نے امیدواروں کی فہرست جا ری کی تو کئی ایم ایل اے کی امید دیں ٹوٹ گئیں، یہ ایسے ایم ایل اے تھے جو دوسری بار اپنی سیٹوں سے الیکشن لڑنے کا خواہش رکھتے تھے۔ لیکن انھیں مایوسی ہاتھ لگی۔ اب انھیں دوسرے پارٹیوں سے ٹکٹ ملنے کی امید ہے۔کرناٹک اسمبلی انتخابات میں بی  جے پی کے وزیراعلی کا چہرہ بی ایس یدی یورپا نے ایسے ہی ایک لیڈر جی وی بلرام کو پاواگڑا سے ٹکٹ دے دیا، لیکن  یدی یورپا کے اس قدم سے پارٹی کے اندر مخالفت شروع ہو گئی ہے۔ بی جے پی اور کانگریس دونوں پارٹیوں میں اس کولے کر ناراضگی ظاہر کی گئی۔ دونوں پا رٹیوں کےکارکنان نے پوری ریاست  میں اپنے پارٹی آفس میں ٹوڑپھوڑ کی۔