کلکتہ ہائی کورٹ: مغربی بنگال پنچایت الیکشن کے لئے ازسر نو تاریخوں کا اعلان کرنے کا حکم دیا

کلکتہ ہائی کورٹ: مغربی بنگال پنچایت الیکشن کے لئے ازسر نو تاریخوں کا اعلان کرنے کا حکم دیا

مغربی بنگال پنچایت الیکشن میں کلکتہ ہائی کورٹ نے اپنے گذشتہ حکم کو منسوخ کرتے ہوئے اسٹیٹ الیکشن کمیشن کو حکم دیا ہے کہ الیکشن کے لئے نامزدگی اور الیکشن کی تاریخ کا اعلان ریاست کے اتفاق رائے سے کرے۔کلکتہ ہائی کورٹ نے مغربی بنگال میں جاری پنچایتی الیکشن کے عمل پر آئندہ حکم تک روک لگادی تھی۔ دراصل بی جے پی اور کانگریس نے اس معاملے میں ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا۔ ریاست کی تمام حزب اختلاف جماعتوں کا الزام ہے کہ پنچایت الیکشن کو لے کر ریاست میں جگہ جگہ تشدد کے واقعات رونما ہورہے ہیں اور مخالفین کو نامزدگی داخل کرنے کا موقع نہیں مل رہا ہے۔ اپوزیشن پارٹیوں کا مطالبہ ہے کہ ریاستی الیکشن کمیشن نے پنچایت الیکشن میں نامزدگی داخل کرنے کی تاریخ ایک دن بڑھا دی تھی۔ حالانکہ ایک دن بعد ہی اس نے اپنا یہ فیصلہ واپس لے لیا۔واضح رہے کہ مغربی بنگال کے 20اضلاع میں 48،650گائوں پنچایت سیٹوں، 9217پنچایت سمیتی سیٹوں، 825 ضلع پریشد سیٹوں کے لئے 1،3اور 5مئی کو تین مرحلے میں پنچایت الیکشن ہونے والے تھے۔ اس کے لئے نامزدگی داخل کرنے کی تاریخ 9اپریل  تھی۔ اپوزیشن کی شکایت پر ریاستی الیکشن کمیشن نے اس کی تاریخ ایک دن بڑھا دی تھی، لیکن پھر اپنے ہی حکم کو منسوخ کردیا۔ حالانکہ ہائی کورٹ کے اس رخ سے پنچایت الیکشن کی تاریخ ملتوی ہوگئی ہے اور اب الیکشن کمیشن کوازسر نو الیکشن کی  تاریخوں کا اعلان کرنا ہوگا۔