ہندوستانی خواتین ہاکی ٹیم نے پہلی مرتبہ جیتی ایشیائی چیمپئنز ٹرافی

ہندوستانی خواتین ہاکی ٹیم نے پہلی مرتبہ جیتی ایشیائی چیمپئنز ٹرافی

 مرد ٹیم کے بعد اب ہندستانی خاتون ہاکی ٹیم نے بھی شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے چین کو ہفتہ کو 2۔1 سے شکست دے کر خاتون ایشین چمپئنز ہاکی ٹورنامنٹ کا خطاب جیت لیا۔ ہندستان کی خطابی جیت میں ڈیپ گریس اکا نے 13 ویں اور دیپکا نے 60 ویں منٹ میں گول کیے۔چین کا واحد گول زانگ میگلگ نے 44 ویں منٹ میں کیا۔ہندستانی مرد ٹیم نے گذشتہ 30 اکتوبر کو دیوالی کے دن ملیشیا کے كوانٹن میں روایتی حریف پاکستان کو 3۔2 سے شکست دے کر ایشین چمپئنز ٹرافی کا ٹائٹل دوسری بار جیت لیا تھا۔

ہندستانی خاتون ٹیم نے پہلی بار یہ خطاب اپنے نام کیا۔ہندستانی ٹیم 2013 میں پچھلے ورژن میں جاپان سے ہار کر رنر اپ رہی تھی جبکہ 2010 میں پہلے ورژن میں اسے تیسرا مقام حاصل ہوا تھا۔ہندستانی ٹیم کو جمعہ کو چین کے ہاتھوں آخری لیگ میچ میں 2۔3 سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا لیکن ہندستانی ٹیم نے فائنل میں اس شکست کا بدلہ چکا لیا۔ لیگ ٹیبل میں چین نو پوائنٹس کے ساتھ پہلے اور ہندوستان سات پوائنٹس کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہا تھا۔فائنل میں ہندستانی ٹیم نے بہتر کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے ٹائٹل حاصل کر کے ہندستانی ہاکی کو دہری خوشی دے دی۔

دیپکا نے آخری هوٹر بجنے سے 20 سیکنڈ پہلے پنالٹی کارنر پر ملے ری باؤنڈ پر غضب کی تیزی دکھاتے ہوئے میچ فاتح گول داغا۔ ڈیپ گریس اکا نے پہلے کوارٹر کے 13 ویں منٹ میں پنالٹی کارنر پر ہندستان کو برتری دلانے والا گول داغا۔آدھے وقت تک ہندوستان کی یہ برتری قائم تھی۔ تیسرے کوارٹر کے ختم ہونے سے ایک منٹ پہلے زانگ نے میدانی گول سے چین کو 1۔1 کی برابری دلا دی لیکن دیپکا نے آخری منٹ میں ہندستان کا میچ فاتح گول داغا۔

ہندستان کی اس خطابی جیت پر ماسٹر بلاسٹر سچن تندولکر نے خاتون ٹیم کو فوری طور پر مبارک باد دی۔یقینی طور سے خاتون ٹیم کے لیے یہ ایک یادگار موقع تھا کیونکہ ریو اولمپکس میں خواتین ٹیم کی کارکردگی یادگار نہیں رہی تھی ۔ لیکن خاتون ٹیم نے اپنا پہلا ایشین چمپئنز خطاب جیت کر اس کی تلافی کر دی۔