ملازمین اندراج مہم2017، آجروں کیلئے سبھی ملازمین سے متعلق  تفصیلات کا رضاکارانہ طور پر اعلان کرنے کا ایک موقع 

ملازمین اندراج مہم2017، آجروں کیلئے سبھی ملازمین سے متعلق  تفصیلات کا رضاکارانہ طور پر اعلان کرنے کا ایک موقع 

نئی دہلی، ای پی ایف او نے ملازمین اندراج مہم2017 کا آغاز کیا ہے، جو کہ ای پی ایف او کے تحت سماجی تحفظ سے متعلق فوائد سے محروم ملازمین سے متعلق تفصیلات کے رضاکارانہ اعلان کی خاطر آجروں کیلئے ایک موقع ہے۔ یہ ڈکلیریشن اسکیم یکم جنوری 2017 کو شروع ہوئی تھی اور 31 مارچ 2017 تک جاری رہے گی۔ اس اسکیم کے تحت اگر کوئی آجر یہ اعلان کرتا ہے کہ متعلقہ ملازم کی طرف سے اس مد میں کوئی رقم ادا نہیں کی گئی ہے تو اسے رخصت دی جائے گی۔ اس سے متعلق خسارے کی ادائیگی اس ڈکلیریشن مہم کے تحت آجر کے ذریعے سالانہ ایک روپے کے حساب سے ادا کرکے کی جاسکتی ہے۔ اس ڈکلیریشن کے تحت ادا کی گئی رقم کے سلسلے میں آجر سے کوئی انتظامی چارجز وصول نہیں کیا جائے گا۔ اس مہم کے تحت کوئی ڈکلیریشن اس مدت کیلئے کیا جاسکتا ہے جس مدت کیلئے سیکشن 7-اے کے تحت کوئی انکوائری شروع نہیں کی گئی ہے۔ 

ای پی ایف او کے پورٹل کے پرنسپل امپلائر سیکشن کے تحت ای پی ایف او نے آن لائن ڈکلیریشن کی سہولت دستیاب کرائی ہے۔ اس پورٹل پر ملازمین اندراج مہم کے نفاذ سے متعلق سہولت دستیاب کرائی گئی ہے۔ ڈکلیریشن کے بعد ادائیگی سے متعلق رقم امپلائرسے ماہوار سابقہ پورے عرصے کیلئے کاٹ لی جائے گی۔ 

اضافہ شدہ سہولیات سے استفادہ کیلئے ملازمین پنشن اسکیم کے اراکین اور پنشنروں کیلئے آدھار نمبر پیش کرنا لازمی قرار دے دیا گیا ہے۔ آدھار نمبر سے جڑے ہوئے بینک کھاتے کی تفصیل پیش کرنے سے ای پی ایف اسکیم سے استفادہ کرنے والوں کی بہتر شناخت ہوسکے گی اور اس سے ای پی ایف کھاتوں کو منظم کرنے میں بھی مدد ملے گی۔ اس سے ای پی ایف اراکین کو کبھی بھی اور کہیں بھی خدمات حاصل کرنے کی سہولت بھی حاصل ہوسکے گی۔ 

ای سی آر2.0 کو چالو کردیا گیا ہے اور اہم آجرین کنٹریکٹر کی کمپنیوں کو کن کن ہدایات پر عمل کرنا ہے اس سے متعلق تفصیلات دیکھ سکتے ہیں۔ اس سے سبھی ملازمین خاص طور پر معاہدے پر کام کرنے والے ملازمین کو مدد ملے گی۔ ایسے ملازمین یہ دیکھ سکیں گے کہ اُن کے آجر ؍ کنٹریکٹر نے کن کن ضابطوں پر عمل نہیں کیا ہے۔ کیونکہ جیسے ہی ان کے کھاتے میں کوئی رقم جمع ہوگی انہیں فورا ایس ایم ایس مل جائے گا۔ 

جنوری 2017 میں ای پی ایف او نے 19 ہزار 114 شکایات کا ازالہ کیا۔ اس طرح سے اب 2 ہزار 556 شکایات زیر التوا ہیں۔ جو شکایات زیر التوا ہیں ان میں سے دوہزار 206 ایسی شکایات ہیں جو 7 دنوں سے کم سے زیر التوا ہیں۔ 

کمپیورٹر کاری کے اگلے مرحلے کے ایک جزو کے طور پر ای پی ایف او ایک سینٹرلائزڈ رسیپٹ و ادائیگی نظام کی سمت میں پیش قدمی کررہا ہے۔ ای پی ایف او نے متعدد بینکون کے ساتھ بینکنگ سے متعلق معاملات کئے ہیں۔ جیسے ہی یہ نظام کام کرنے لگے گا اس سے تنظیمی بینلس شیٹ اور دیگر مونیٹرنگ رپورٹ کی ترتیب کیلئے درکار مالی اطلاعات کی خودکار ترتیب وتنظیم کی سہولت دستیاب ہوجائے گی۔