بوریت دور کرنے کیلئے نرس نے لوگوں کو اتاردیا موت کے گھاٹ

بوریت دور کرنے کیلئے نرس نے لوگوں کو اتاردیا موت کے گھاٹ

برلن : برلن میں ایک نرس کو 106 مریضوں کی موت کا ذمہ دار بتایا جارہا ہے۔ الزامات کے مطابق بوریت کی وجہ سے اس نے مریضوں کو خطرناک ادویات دیدیں، جس کی وجہ سے ان کی موت ہوگئی ۔ معاملہ کی جانچ کرنے والوں کا کہنا ہے کہ مہلوکین کی تعداد میں اضافہ بھی ہوسکتا ہے۔

یاد رہے کہ 41 سالہ نیلس ہوئیگل کو 2015 میں دو افراد کے قتل ، چار افراد کے قتل کی کوش اور سنگین صورتحال میں داخل مریضوں کو نقصان پہنچانے کا قصوروار قرار دیا گیا تھ ۔ اس دوران وہ بریمین کے شمالی شہر میں ڈیل مین ہارسٹ اسپتال میں کام کررہاتھا ۔ اس کے بعد جانچ میں پتہ چلا ہے کہ ہوئیگل نے 90 سے زیادہ مریضوں کا قتل کیا تھا۔