نئے سال پر گھنے کہرے میں لپٹی دہلی

نئے سال پر گھنے کہرے میں لپٹی دہلی

نئی دہلی۔ قومی راجدھانی میں لوگوں نے آج نئے سال کا استقبال گھنے کہرے کے ساتھ کیا۔ تاہم دن چڑھنے کے ساتھ دھند کم ہونے لگی ہے۔ ویژیبلٹی کم ہونےکی وجہ سے ریل اور ہوائی خدمات پر گہرا اثر پڑا۔

سرکاری ذرائع کے مطابق گہرے دھند اور رن وے پر ویژیبلٹی کا معیار انتہائی کم سطح پر ہونےکی وجہ سے تقریبا 20 پروازوں کو منسوخ کرنا پڑا۔ 150 سے زائد پروازوں میں تاخیر ہوئی اور تقریبا 50 طیاروں کی روٹ میں تبدیلی کی گئی۔ ریل خدمات بھی اس کہرے سے متاثر ہوئے بغیر نہیں رہ سکی۔

گھنے کہرے کے باوجود نئے سال کے موقع پر كہيں کہیں مندروں میں عقیدت مندوں کی بھیڑ دیکھی گئی۔ کم ویژیبلٹی کی وجہ سے سڑکوں پر گاڑیاں رینگ رہی تھیں۔ سرکاری ذرائع کے مطابق گہرے دھند اور رن وے پر ویژیبلٹی کا معیار انتہائی کم سطح پر ہونےکی وجہ سے تقریبا 20 پروازوں کو منسوخ کرنا پڑا۔

ویسے موسمیات سے متعلق سائنسدانوں نے یہ خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اگلے کچھ دنوں میں سردی سے کوئی راحت نہیں ملے گی۔  بتا دیں کہ شمالی ہندوستان میں ٹھنڈک اپنا اثر دکھا رہی ہے۔ پنجاب اور ہریانہ بھی سردی کی گرفت میں ہیں۔ اتوار کو جہاں زیادہ تر مقامات پر کہرا چھایا رہا۔ حصار سب سے ٹھنڈ مقام رہا  جہاں درجہ حرارت صفر سے 3.9 ڈگری سیلسیس رہا جو معمول سے تین ڈگری کم تھا۔