ہندوستان میں عربی زبان کی ترویج کے لیے عملی اقدامات کی ضرورت

ہندوستان میں عربی زبان کی ترویج کے لیے عملی اقدامات کی ضرورت

نئی دہلی : ہندوستان میں عربی زبان کی تعلیم و تدریس کی تاریخ نہایت قدیم ہے اور اس کے ارتقاء میں یونیورسٹیوں کے ساتھ ساتھ مدارس اسلامیہ کا کردار غیر معمولی ہے، آج زمانہ بدل چکا ہے اور ٹکنالوجی کے دور میں اگر ہمیں عربی زبان کی خدمت کرنی ہے تو ہمیں عربی کے طریقہ تدریس کو زمانے کے تقاضوں کے مطابق بدلناہوگا اور ہندوستان میں عربی زبان کی ترویج اور اس کی اشاعت کے لیے ہمیں فکری نظریات کے ساتھ ساتھ عملی اقدامات کرنے ہوں گے۔ان خیالات کا اظہار شعبہ عربی دہلی یونی ورسٹی اورکل ہند انجمن اساتذہ وعلمایٔ عربی زبان کے صدرپروفیسر محمد نعمان خان نے دہلی یونیورسٹی کے شعبہ عربی میں ’آزادی کے بعد ہندوستان میں عربی زبان وادب کا فروع‘ کے موضوع پر منعقد ایک روزہ نیشنل ریسرچ اسکالرز سیمینار کے افتتاحی اجلاس میں کیا۔ اس موقع پر ریسرچ اسکالروں کو نصیحت کرتے ہوئے انھوں نے مزید کہا کہ آپ عربی زبان کے مستقبل ہیں، عربی زبان کے فروغ کے لیے اپنے آپ کو تیار کریں اور اپنی پوشیدہ صلاحیت کو اجاگر کریں۔