جگر کو نقصان پہنچانے والی 6 چیزیں

جگر کو نقصان پہنچانے والی 6 چیزیں

جگر انسانی جسم کے ان حصوں میں سے ایک ہے جن کو عام طور پر اس وقت تک سنجیدہ نہیں لیا جاتا جب تک وہ مسائل کا باعث نہیں بننے لگتے اور کچھ لوگوں کے لیے بہت تاخیر ہوجاتی ہے۔جگر کا درست طریقے سے کام کرنا متعدد وجوہات کے باعث اچھی صحت کے لیے انتہائی ضروری ہے۔ تاہم اس کی بڑی اہمیت یہ ہے کہ ہم جو کچھ بھی کھاتے ہیں اسے ہضم کرنے کے لیے جگر کی ضرورت ہوتی ہے۔تو اس میں کسی بھی قسم کی خرابی یا بیماری کی صورت میں جو علامات سامنے آتی ہیں وہ بھی اکثر افراد نظر انداز کردیتے ہیں۔یہاں جگر کو نقصان پہنچنے والی ایسی اشیاکا ذکر کیا گیا ہے جن کا حد سے زیادہ استعمال تباہ کن ثابت ہوسکتا ہے۔ چینی:بہت زیادہ چینی صرف دانتوں یا ذیابیطس کا باعث ہی نہیں بنتی، بلکہ یہ جگر کو بھی نقصان پہنچاتی ہے۔ بہت زیادہ چینی استعمال کرنے کی صورت میں جگر پر چربی چڑھنے لگتی ہے، جو جگر کے امراض کا باعث بنتی ہے، کچھ طبی رپورٹس کے مطابق چینی جگر کو الکحل جتنا نقصان پہنچاتی ہے چاہے آپ موٹاپے کے شکار نہ بھی ہوں۔ موٹاپا: جسم میں اضافہ چربی جگر کے خلیات پر بھی چڑھتی ہے اور فیٹی لیور امراض کا خطرہ بڑھ جاتا ہے، اس کے نتیجے میں جگر سوج سکتا ہے، وقت گزرنے کے ساتھ جگر سخت اور اس کے ٹشوز پر زخم آسکتے ہیں۔ موٹاپے سے ذیابیطس ، امراض قلب اور بلڈ پریشر جیسے امراض کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے۔ بہت زیادہ وٹامن اے:آپ کے جسم کو وٹامن اے کی ضرورت ہوتی ہے اور تازہ پھلوں و سبزیوں کے ذریعے اس کا حصول بہتر ہوتا ہے، تاہم اگر سپلیمنٹس کا استعمال کیا جائے تو یہ مقدار بہت زیادہ بڑھ جاتی ہے جس سے جگر کے مسائل پیدا ہونے کا خطرہ ہوتا ہے۔ سافٹ ڈرنکس:طبی رپورٹس کے مطابق جو لوگ بہت زیادہ سافٹ ڈرنکس کا استعمال کرتے ہیں ان میں جگر پر چربی چڑھنے کے مرض کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے۔ جنک فوڈ:جنک یا فاسٹ فوڈ میں شامل ٹرانس فیٹ موٹاپے کا باعث بنتے ہیں جو کہ جگر کے لیے کوئی اچھی چیز نہیں، جیسا اوپر بتایا گیا ہے کہ موٹاپے سے جگر پر چربی چڑھنے کے مرض کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ الکحل:الکحل جگر کے لیے تباہ کن چیز ہے چاہے کسی بھی مقدار میں اس کا استعمال ہو۔